URDU POETRY 09

عشق بڑا ہرجائی ہے!

پہلی شرط جدائی ہے
عشق بڑا ہرجائی ہے!
گم ہیں ہوش ہواؤں کے
کس کی خوشبو آئی ہے!

خواب قریبی رشتے دار
لیکن نیند پرائی ہے!

چاند تراشے ساری عمر
تب کچھ دھوپ کمائی ہے!

میں بچھڑا ہوں ڈالی سے
دنیا کیوں مرجھائی ہے؟

دل پر کس نے دستک دی؟
تم ہو یا تنہائی ہے؟
دریا دریا ناپ چکے ہیں
مٹھی بھر گہرائی ہے!
سورج ٹوٹ کے بکھرا تھا
رات نے ٹھوکر کھائی ہے!
کوئی مسیحا کیا جانے؟
زخم ہے یا گہرائی ہے!
واہ رے پاگل، واہ رے دل
اچھی قسمت پائی ہے!!


Post a Comment

0 Comments